دوسرا بن باس

کیفی اعظمی

دوسرا بن باس

کیفی اعظمی

MORE BYکیفی اعظمی

    INTERESTING FACT

    ۱۹۹۲ میں بابری مسجد کی مسماری کے رد عمل میں کیفی اعظمی کا ایک بھرپور اظہار

    رام بن باس سے جب لوٹ کے گھر میں آئے

    یاد جنگل بہت آیا جو نگر میں آئے

    رقص دیوانگی آنگن میں جو دیکھا ہوگا

    چھ دسمبر کو شری رام نے سوچا ہوگا

    اتنے دیوانے کہاں سے مرے گھر میں آئے

    جگمگاتے تھے جہاں رام کے قدموں کے نشاں

    پیار کی کاہکشاں لیتی تھی انگڑائی جہاں

    موڑ نفرت کے اسی راہ گزر میں آئے

    دھرم کیا ان کا تھا، کیا ذات تھی، یہ جانتا کون

    گھر نہ جلتا تو انہیں رات میں پہچانتا کون

    گھر جلانے کو مرا لوگ جو گھر میں آئے

    شاکاہاری تھے میرے دوست تمہارے خنجر

    تم نے بابر کی طرف پھینکے تھے سارے پتھر

    ہے مرے سر کی خطا، زخم جو سر میں آئے

    پاؤں سرجو میں ابھی رام نے دھوئے بھی نہ تھے

    کہ نظر آئے وہاں خون کے گہرے دھبے

    پاؤں دھوئے بنا سرجو کے کنارے سے اٹھے

    رام یہ کہتے ہوئے اپنے دوارے سے اٹھے

    راجدھانی کی فضا آئی نہیں راس مجھے

    چھ دسمبر کو ملا دوسرا بن باس مجھے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    کیفی اعظمی

    کیفی اعظمی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    دوسرا بن باس نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY