اب سو جاؤ

فہمیدہ ریاض

اب سو جاؤ

فہمیدہ ریاض

MORE BYفہمیدہ ریاض

    اب سو جاؤ

    اور اپنے ہاتھ کو میرے ہاتھ میں رہنے دو

    تم چاند سے ماتھے والے ہو

    اور اچھی قسمت رکھتے ہو

    بچے کی سو بھولی صورت

    اب تک ضد کرنے کی عادت

    کچھ کھوئی کھوئی سی باتیں

    کچھ سینے میں چبھتی یادیں

    اب انہیں بھلا دو سو جاؤ

    اور اپنے ہاتھ کو میرے ہاتھ میں رہنے دو

    سو جاؤ تم شہزادے ہو

    اور کتنے ڈھیروں پیارے ہو

    اچھا تو کوئی اور بھی تھی

    اچھا پھر بات کہاں نکلی

    کچھ اور بھی یادیں بچپن کی

    کچھ اپنے گھر کے آنگن کی

    سب بتلا دو پھر سو جاؤ

    اور اپنے ہاتھ کو میرے ہاتھ میں رہنے دو

    یہ ٹھنڈی سانس ہواؤں کی

    یہ جھلمل کرتی خاموشی

    یہ ڈھلتی رات ستاروں کی

    بیتے نہ کبھی تم سو جاؤ

    اور اپنے ہاتھ کو میرے ہاتھ میں رہنے دو

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY