جبریل و ابلیس

علامہ اقبال

جبریل و ابلیس

علامہ اقبال

MORE BYعلامہ اقبال

    INTERESTING FACT

    ( بال جبریل)

    جبرئیل

    ہمدم دیرینہ کیسا ہے جہان رنگ و بو

    ابلیس

    سوز و ساز و درد و داغ و جستجو و آرزو

    جبرئیل

    ہر گھڑی افلاک پر رہتی ہے تیری گفتگو

    کیا نہیں ممکن کہ تیرا چاک دامن ہو رفو

    ابلیس

    آہ اے جبریل تو واقف نہیں اس راز سے

    کر گیا سرمست مجھ کو ٹوٹ کر میرا سبو

    اب یہاں میری گزر ممکن نہیں ممکن نہیں

    کس قدر خاموش ہے یہ عالم بے کاخ و کو

    جس کی نومیدی سے ہو سوز درون کائنات

    اس کے حق میں تقنطو اچھا ہے یا لاتقنطوا

    جبرئیل

    کھو دیئے انکار سے تو نے مقامات بلند

    چشم یزداں میں فرشتوں کی رہی کیا آبرو

    ابلیس

    ہے مری جرأت سے مشت خاک میں ذوق نمو

    میرے فتنے جامۂ عقل و خرد کا تار و پو

    دیکھتا ہے تو فقط ساحل سے رزم خیر و شر

    کون طوفاں کے طمانچے کھا رہا ہے میں کہ تو

    خضر بھی بے دست و پا الیاس بھی بے دست و پا

    میرے طوفاں یم بہ یم دریا بہ دریا جو بہ جو

    گر کبھی خلوت میسر ہو تو پوچھ اللہ سے

    قصۂ آدم کو رنگیں کر گیا کس کا لہو

    میں کھٹکتا ہوں دل یزداں میں کانٹے کی طرح

    تو فقط اللہ ہو اللہ ہو اللہ ہو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ذوالفقار علی بخاری

    ذوالفقار علی بخاری

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    جبریل و ابلیس نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY