چار بجے

MORE BYراجہ مہدی علی خاں

    بیٹھے بٹھائے ہو گئی گھر میں مار کٹائی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    الٹی ہو گئیں سب تدبیریں کچھ نہ دعا نے کام کیا

    امی اور ابا نے مل کر میرا کام تمام کیا

    آج محلے بھر میں گونجی میری دہائی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    ناحق ہم مجبوروں پر یہ تہمت ہے مختاری کی

    کتنی خوشی سے ہم نے اپنے پٹنے کی تیاری کی

    سارے گھر میں ہم نے کیسی دھوم مچائی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    بی ہمسائی تو کیوں آئی تھی تجھ کو شاید علم نہیں

    یہ میرے پٹنے کا منظر، کوئی اچھی فلم نہیں

    تو میرا یہ 'میٹنی شو' کیوں دیکھنے آئی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    چائے کی میز پہ میں نے کچھ نقص نکالے فوڈ میں تھے

    ہائے ری قسمت امی ابا دونوں ہی کچھ موڈ میں تھے

    بیٹھے بیٹھے ان کو سوجھی میری بھلائی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    تیرے حکم بنا اے داتا پتا تک نہیں ہلتا ہے

    میں تو جانوں تیرے ہی در سے مجھ کو سب کچھ ملتا ہے

    تھینک یو تھینک یو تو نے کرائی میری ٹھکائی چار بجے

    میرے بزرگوں نے مجھ کو تہذیب سکھائی چار بجے

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY