نیا سال

جوہر رحمانی

نیا سال

جوہر رحمانی

MORE BYجوہر رحمانی

    نئے سال کی یوں خوشی ہم منائیں

    کہ روٹھے ہوؤں کو گلے سے لگائیں

    گئے سال کے سارے غم بھول جائیں

    نیا سال آیا نئے گل کھلائیں

    ستاروں سے دھرتی کا دامن سجائیں

    نظاروں کو تصویر جنت بنائیں

    رہے راج دھرتی پہ اب شانتی کا

    نہ چھائیں کہیں جنگ کی اب گھٹائیں

    مٹانا ہے ہم کو کدورت دلوں سے

    ہر اک سمت سے آئیں بس یہ صدائیں

    ہمیں پاسباں کل بنیں گے وطن کے

    کریں عہد جو بھی وہ کر کے دکھائیں

    نیا سال یا رب مبارک ہو سب کو

    نئے روز و شب سب کو ہی راس آئیں

    نئے سال کی یوں کریں پیشوائی

    غموں کو بھلا کر فقط مسکرائیں

    اسی گلستاں کے ہیں سب پھول جوہرؔ

    کھلیں مسکرائیں ہنسیں اور ہنسائیں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے