نظم

MORE BYرتن ناتھ سرشار

    جھلکا جھلکا سپیدۂ صبح

    جھلکا جھلکا سپیدۂ صبح

    تارے چھپتے ہیں جھلملا کر

    ہے نور سا جلوہ گر فلک پر

    بھینی بھینی مہک گلوں کی

    اور نغمہ زنی وہ بلبلوں کی

    وقت صحرا اور تنگ ہوا ہے

    بے مے سب کرکرا مزا ہے

    اک چلو کے دینے میں یہ تکرار

    اٹھو جاگو سحر ہوئی یار

    دریا کی طرف چلے نہانے

    غٹ پریوں کے زنان خانے

    مرغان چمن یہ نکتہ رانی

    چوں برہمنان یہ بید خوانی

    نوبت رنگت جمنا رہی ہے

    شہنشائے مزہ دکھا رہی ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 49)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2013-14)
    • اشاعت : 2013-14

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے