نیم پاگل

ہرشلتا

نیم پاگل

ہرشلتا

MORE BYہرشلتا

    وہ ایک نیم پاگل لڑکی

    بیٹھی رہتی تھی کنارے پر

    باندھے امید کی ڈور

    کہ لوٹ آئے گی اس کی کشتی

    جو بہہ گئی تھی تیز لہروں میں کبھی

    کنارے پر ہی دکھتی تھی صبح شام

    ہر آنے والی لہر کی آہٹ بھر سے

    چمک جاتی تھیں اس کی آنکھیں

    لیکن ہر آتی لہر خالی ہاتھ ہی آتی

    اور لوٹتی تو لے جاتی پیروں کی زمیں بھی

    دیکھتی رہتی وہ

    چڑھتے اور اترتے سورج کے نارنگی رنگ کو

    صبح کی سیندوری لالی

    شام کو دہکاتی اس کے دل میں انگارے

    وہ ایک نیم پاگل لڑکی

    بیٹھی رہتی تھی کنارے پر

    کچھ دنوں سے دکھتی نہیں اب

    شاید انتظار نہیں کر سکی کچھ اور روز

    روک نہیں سکی خود کو

    اور چلی گئی لہروں کی اور

    اپنی کشتی کی تلاش میں

    دور بہت بہت دور تلک

    وہ ایک نیم پاگل لڑکی

    مأخذ :
    • کتاب : Word File Mail By Salim Saleem

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY