شہید وطن

جوشؔ ملسیانی

شہید وطن

جوشؔ ملسیانی

MORE BY جوشؔ ملسیانی

    دیکھیے ان جینے والوں کا نشان زندگی

    دیکھیے ان مرنے والوں کا جہان زندگی

    دیکھیے ان پستیوں میں آسمان زندگی

    دیکھیے ان خاک کے ذروں کی شان زندگی

    بیٹھیے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    دیکھیے روح وفا کیا کیا ابھرتی ہے یہاں

    دیکھیے حب وطن دل میں اترتی ہے یہاں

    دیکھیے دل کی فضا کیسی نکھرتی ہے یہاں

    دیکھیے رحمت خدا کی طوف کرتی ہے یہاں

    بیٹھیے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    اس جگہ بے رنگیاں بھی عالم تصویر ہیں

    اس جگہ تاریکیاں بھی شمع کی تنویر ہیں

    اس جگہ خاموشیاں بھی اک لب تقریر ہیں

    اس جگہ روپوشیاں بھی دل کی دامن گیر ہیں

    بیٹھیے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    اٹھ گئے دنیا سے لیکن ایک دنیا ہو گئے

    بلبلے پانی کے تھے ٹوٹے تو دریا ہو گئے

    یہ وہ تھے ذرات جو اڑ کر ثریا ہو گئے

    یہ وہ تھے بیمار جو مر کر مسیحا ہو گئے

    بیٹھے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    دل کے اجڑے باغ کو آباد ہوتے دیکھیے

    روح کی افسردگی کو شاد ہوتے دیکھیے

    بندگی کو قید سے آزاد ہوتے دیکھیے

    پر شکستہ صید کو صیاد ہوتے دیکھیے

    بیٹھیے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    آئیے اس خاک سے کسب فضیلت کیجیے

    آئیے قربان اس پر دل کی دولت کیجیے

    ہاں ذرا رک جائیے اتنی نہ عجلت کیجیے

    اس زیارت گاہ عالم کی زیارت کیجیے

    بیٹھیے دم بھر شہیدان وطن کی خاک پر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY