ایک رات کی کہانی

فہمیدہ ریاض

ایک رات کی کہانی

فہمیدہ ریاض

MORE BYفہمیدہ ریاض

    بڑی سہانی سی رات تھی وہ

    ہوا میں انجانی کھوئی کھوئی مہک رچی تھی

    بہار کی خوش گوار حدت سے رات گلنار ہو رہی تھی

    روپہلے سپنے سے آسماں پر سحاب بن کر بکھر گئے تھے

    اور ایسی اک رات ایک آنگن میں کوئی لڑکی کھڑی ہوئی تھی

    خموش تنہا

    وہ اپنی نازک حسین سوچوں کے شہر میں کھو کے رہ گئی تھی

    دھنک کے سب رنگ اس کی آنکھوں میں بھر گئے تھے

    وہ ایسی ہی رات تھی کہ راہوں میں اس کی موتی بکھر گئے تھے

    ہزار اچھوتے کنوارے سپنے

    نظر میں اس کی چمک رہے تھے

    شریر سی رات اس کو چپکے سے وہ کہانی سنا رہی تھی

    کہ آج

    وہ اپنی چوڑیوں کی کھنک سے شرمائی جا رہی تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے