زمین اپنے بیٹوں کو پہچانتی ہے

عین تابش

زمین اپنے بیٹوں کو پہچانتی ہے

عین تابش

MORE BYعین تابش

    زمین ایک مدت سے

    ہفت آسماں کی طرف سر اٹھائے ہوئے

    رو رہی ہے

    زمین اپنے آنسو

    بہت اپنی ہی کوکھ میں بو رہی ہے

    زمیں دل کشادہ ہے کتنی

    فلک کے اتارے ہوئے بوجھ بھی ڈھو رہی ہے

    فضا پر بہت دھند چھائی ہوئی ہے

    جواں گل بدن شاہزادے

    زمیں کے دلارے

    اجڑتی ہوئی بزم کے چاند تارے

    کٹی گردنوں گولیوں سے چھدے جسم کی

    رت سجائے لہو میں نہائے

    زمیں کی طرف آ رہے ہیں

    زمیں ایک مدت سے

    اس کار و بار ستم میں گھری ہے

    زمین رو رہی ہے

    مگر اس کے آنسو کی تحریر

    روشن ہے اتنی

    کہ آئندہ موسم اسی زندہ تحریر سے

    جگمگاتے رہیں گے

    اگر اس کے شہزادے

    یوں ہی لہو میں نہاتے رہیں گے

    تو اک روز تاریخ

    ان کے لیے حشر برپا کرے گی

    مأخذ :
    • کتاب : dasht ajab hairanii ka shayar (Pg. 71)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY