Khurshid Ahmad Jami's Photo'

خورشید احمد جامی

1915 - 1970 | حیدر آباد, ہندوستان

نئی غزل کے اہم شاعروں میں شامل

نئی غزل کے اہم شاعروں میں شامل

401
Favorite

باعتبار

کوئی ہلچل ہے نہ آہٹ نہ صدا ہے کوئی

دل کی دہلیز پہ چپ چاپ کھڑا ہے کوئی

یاد ماضی کی پراسرار حسیں گلیوں میں

میرے ہم راہ ابھی گھوم رہا ہے کوئی

بڑے دلچسپ وعدے تھے بڑے رنگین دھوکے تھے

گلوں کی آرزو میں زندگی شعلے اٹھا لائی

سحر کے ساتھ چلے روشنی کے ساتھ چلے

تمام عمر کسی اجنبی کے ساتھ چلے

نہ انتظار نہ آہیں نہ بھیگتی راتیں

خبر نہ تھی کہ تجھے اس طرح بھلا دوں گا

کچھ دور آؤ موت کے ہم راہ بھی چلیں

ممکن ہے راستے میں کہیں زندگی ملے

چمکتے خواب ملتے ہیں مہکتے پیار ملتے ہیں

تمہارے شہر میں کتنے حسیں آزار ملتے ہیں

اے انتظار صبح تمنا یہ کیا ہوا

آتا ہے اب خیال بھی تیرا تھکا ہوا

پہچان بھی سکی نہ مری زندگی مجھے

اتنی روا روی میں کہیں سامنا ہوا

سلام تیری مروت کو مہربانی کو

ملا اک اور نیا سلسلہ کہانی کو

جلاؤ غم کے دئے پیار کی نگاہوں میں

کہ تیرگی ہے بہت زندگی کی راہوں میں

وفا کی پیار کی غم کی کہانیاں لکھ کر

سحر کے ہاتھ میں دل کی کتاب دیتا ہوں

تری نگاہ مداوا نہ بن سکی جن کا

تری تلاش میں ایسے بھی زخم کھائے ہیں

یادوں کے درختوں کی حسیں چھاؤں میں جیسے

آتا ہے کوئی شخص بہت دور سے چل کے

زندگانی کے حسیں شہر میں آ کر جامیؔ

زندگانی سے کہیں ہاتھ ملائے بھی نہیں