آہٹیں تازہ مقدر کی طرف

پرویز رحمانی

آہٹیں تازہ مقدر کی طرف

پرویز رحمانی

MORE BY پرویز رحمانی

    آہٹیں تازہ مقدر کی طرف

    آئنوں کے دھیان پتھر کی طرف

    وسوسے سینہ سپر موجود سے

    واہمے کی پشت خنجر کی طرف

    شیشہ شیشہ خوف ہر چہرے پہ نقش

    اک نشانہ سیکڑوں سر کی طرف

    حال پر دشمن کی پوشیدہ رخی

    آئنہ روشن سکندر کی طرف

    مسکرا کر آبلہ تن بڑھ گئے

    خار کے سرخاب بستر کی طرف

    روشنی باہر بڑی تیزاب ہے

    قطرہ قطرہ آنکھ منظر کی طرف

    سروری تھی نوک پائے خاکسار

    جا پڑی دستار خود سر کی طرف

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY