اکیلے کو بھی آتی ہے ہنسی کیا

اجیت سنگھ بادل

اکیلے کو بھی آتی ہے ہنسی کیا

اجیت سنگھ بادل

MORE BY اجیت سنگھ بادل

    اکیلے کو بھی آتی ہے ہنسی کیا

    کسی کی یاد نے کی گدگدی کیا

    نظر آنے لگے ہر حال میں تم

    ہمیں اب کیا اندھیرا روشنی کیا

    یہ کم کم رابطہ بھی ختم سمجھوں

    یہی ہے آپ کا خط آخری کیا

    بنے جب تک نہ سانسوں کا توازن

    نچاؤں انگلیوں پر بانسری کیا

    وکالت تیرا پیشہ ہے تو بادلؔ

    کرے گا جھوٹ کی بھی پیروی کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites