اماں ملی نہ کسی کو ملا قرار کبھی

جاوید منظر

اماں ملی نہ کسی کو ملا قرار کبھی

جاوید منظر

MORE BY جاوید منظر

    اماں ملی نہ کسی کو ملا قرار کبھی

    کوئی بھی اپنی زمیں سے نہ ہو فرار کبھی

    بٹیں گے ہم بھی قبیلوں میں یہ نہ سوچا تھا

    ملے گا خوف زدہ ایسا ریگزار کبھی

    جو ہم سفر ہیں ہمارے وہ پرخلوص نہیں

    نہ راہبر پہ رہا ہم کو اعتبار کبھی

    یقیں نہ آیا کہ صدیاں گزار دیں جس پر

    اس ایک شاخ کو کاٹے گا اپنا یار کبھی

    میں چل دیا ہوں اے منظرؔ تو اس یقین کے ساتھ

    کوئی نہ جائے گا اس طرح سوئے دار کبھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites