بے سبب چاک پر دھرے تھے ہم

چراغ بریلوی

بے سبب چاک پر دھرے تھے ہم

چراغ بریلوی

MORE BY چراغ بریلوی

    بے سبب چاک پر دھرے تھے ہم

    بنتے بنتے بھی کیا بنے تھے ہم

    ضبط غم ہار ہی گیا آخر

    اس کو دیکھا تو رو پڑے تھے ہم

    تجھ کو کانٹے کہاں سے لگ جاتے

    آگے آگے جو چل رہے تھے ہم

    حادثہ کس طرف کو لے آیا

    گھر سے کیا سوچ کر چلے تھے ہم

    سچ بتا خالق جہان خراب

    اس تماشے کو ہی بنے تھے ہم

    ہو گئی شام تب ملی دنیا

    سارا دن ڈھونڈے پھرے تھے ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites