انشاء اللہ خاں انشاءؔ کے 10 منتخب شعر

لکھنؤ کے سب سے گرم مزاج شاعر ، میر تقی میر کے ہم عصر ، مصحفی کے ساتھ چشمک کے لئے مشہور ، انہوں نے ریختی میں بھی شعر کہے اور نثر میں ’رانی کیتکی کی کہانی‘ لکھی

عجیب لطف کچھ آپس کی چھیڑ چھاڑ میں ہے

کہاں ملاپ میں وہ بات جو بگاڑ میں ہے

انشا اللہ خاں انشا

کمر باندھے ہوئے چلنے کو یاں سب یار بیٹھے ہیں

بہت آگے گئے باقی جو ہیں تیار بیٹھے ہیں

انشا اللہ خاں انشا

جذبۂ عشق سلامت ہے تو انشا اللہ

کچے دھاگے سے چلے آئیں گے سرکار بندھے

انشا اللہ خاں انشا

کیا ہنسی آتی ہے مجھ کو حضرت انسان پر

فعل بد خود ہی کریں لعنت کریں شیطان پر

انشا اللہ خاں انشا

نہ چھیڑ اے نکہت باد بہاری راہ لگ اپنی

تجھے اٹکھیلیاں سوجھی ہیں ہم بے زار بیٹھے ہیں

انشا اللہ خاں انشا

جی کی جی ہی میں رہی بات نہ ہونے پائی

حیف کہ اس سے ملاقات نہ ہونے پائی

انشا اللہ خاں انشا

کچھ اشارہ جو کیا ہم نے ملاقات کے وقت

ٹال کر کہنے لگے دن ہے ابھی رات کے وقت

انشا اللہ خاں انشا

یہ عجیب ماجرا ہے کہ بروز عید قرباں

وہی ذبح بھی کرے ہے وہی لے ثواب الٹا

انشا اللہ خاں انشا

سانولے تن پہ غضب دھج ہے بسنتی شال کی

جی میں ہے کہہ بیٹھیے اب جے کنھیا لال کی

انشا اللہ خاں انشا

ہزار شیخ نے داڑھی بڑھائی سن کی سی

مگر وہ بات کہاں مولوی مدن کی سی

انشا اللہ خاں انشا