charagh-e-dair

मिर्ज़ा ग़ालिब

इंडियन लैंग्वेजेज़, हैदराबाद
1974 | अन्य
  • सहयोगी

    रेख़्ता

  • अनुवादक

    अख़तर हसन

  • ISBN संख्यांक / ISSN संख्यांक

  • श्रेणियाँ

    शाइरी, अनुवाद

  • पृष्ठ

    79

पुस्तक: परिचय

परिचय

غالب سفر کلکتہ کے درمیان بنارس بھی گئے ۔ اسی شہر کے لیے ان کی مشہور فارسی مثنوی ’’چراغ دیر‘‘ منظر عام پر آتی ہے ۔اس میں انہوں نے جس والہانہ انداز میں بنار س کا ذکر کیا ہے اس سے اس خطے کے ذرے ذرے سے ان کی محبت پھوٹتی ہوئی نظرآتی ہے ۔ مثنوی سے ہی پتہ چلتا ہے کہ وہ نہ صرف اس کے حسن و جمال اور ظاہری و باطنی کے مداح ہیں بلکہ وہ بنارس کو قیام عالم کا باعث بھی گردانتے ہیں ۔بنارس جب وہ پہنجے تو پنشن کے باعث جوانہیں ذہنی پریشانی تھی وہ مندمل ہونے لگی ۔ وہ بنار س کو دلی سا خیال کر کے وہیں رہنے کی خواہش ظاہر کرنے لگے ۔اس مثنوی میں انہوں نے وہاں کی پریزادوں کی تعریف کی ہے ۔ جب وہ وہاں پہنچے تو تقریبا ً تیس برس کے رہے ہوں گے ایسے میں انہوں نے اگر وہاں کے بتوں کے پہلو میں سکون و آسائش تلاش کی تو یہ عین فطرت کا تقاضہ تھا ۔ وہاں کی خوبصورتی کے لیے انہوں نے اس مثنوی میں جو خوبصورت تراکیب تراشے ہیں وہ بے نظیر ہیں ۔یہ مثنوی تو اصل میں فارسی میں ہے لیکن اس کتاب میں اس کا منطوم ترجمہ پیش کیا جارہا ہے جس کے متر جم اختر حسین ہیں ان کے اس تر جمہ کی بھی کافی پذیرائی ہوئی ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम