israr-e-hayat

Ishwara Nath Topa

Sohail Publication, Hyderabad
1944 | More Info

About The Book

Description

یہ کتاب در اصل ویما کے ان خیالات اور مقولوں کا اردو ترجمہ ہے جو اس نے تلنگی زبان میں کہے تھے ، ویما دنیا کے انسانوں کی فطرت کا معلم تھا ،وہ انسانیت کا ایسا غیر معمولی نمونہ تھا جس نے اپنی زندگی میں دوسروں کو امن و سکون کا پیام ہی نہیں دیا بلکہ وہ خود کامل انسان کے درجے پر فائق تھا ، اس نے انسان اور خدا میں ایک نیا رشتہ جوڑا، ویما کے نزدیک انسانیت بغیر خدا پرستی یا خدا پرستی بغیر انسانیت کے ممکن نہیں، اس کے نزدیک انسان ، انسان بن کر ہی خدا پرست ہو سکتا ہے، ویماؔ کا سارا فلسفئہ حیات خداپرستی کا نتیجہ تھا ، ویما کا فلسفہ ہے کہ خدا پرستی میں ہی حکمت موجود ہے ، ویماّ کے وہ خیالات و مقولات جو تلنگی زبان میں بکھرے ہوئے تھے ان کے انگریزی ترجمے کو اردو کا قالب دیا گیا ہے ، ویسے تو ویما کے کئی سو مقولے ہیں لیکن اس کتاب میں ان کے ممتاز مقولوں کا ہی انتخاب کیا گیا ہے چونکہ یہ تما م مقولے بے ترتیب تھے اس لئے مختلف عنوانین کے تحت ایشور ناتھ ٹوپا نے ان مقولوں کو ترتیب دیکر کتابی شکل میں پیش کر دیا ہے۔

.....Read more

More From Author

See More

Popular And Trending Read

See More

EXPLORE BOOKS BY

Book Categories

Books on Poetry

Magazines

Index of Books

Index of Authors

University Urdu Syllabus