سب رس

ملا وجہی

نسیم بک ڈپو، لکھنؤ
1976 | مزید

کتاب: تعارف

تعارف

"سب رس" ملا وجہی کی کتا ب ہے جسے اردو کی پہلی نثری کتاب ہونے کا بھی شرف حاصل ہے۔وجہی نے اپنی کتاب کو تمثیلی انداز میں بیان کیا ہے۔ ان کی کتاب اردو کی پہلی کتاب کے طور پر جانی جاتی ہے۔ یہ کتاب دکن میں قطب شاہی عہد میں لکھی گئی۔ وجہی اس کی زبان کو ہندوستانی زبان کہہ کر یاد کرتا ہے ۔ کتاب کی زبان اپنے عہد کی عکاسی کرتی ہے۔ اگرچہ بعض جگہ پر وہ دکنی اور ہندی، فارسی، عربی،سنسکرت کے الفاظ بھی استعمال کرتا ہے۔ اپنے زمانے میں اس کی یہ کتاب بہت ہی خوصورت نثر کا نمونہ سمجھی جاتی تھی۔ اسلئے آج کے اعتبار سے جو اس کتاب میں نقص پایا جاتا ہے، وہ مرور زمانہ اور زبان کی ترقی کی وجہ سے ہے، ناکہ کتاب کی خامی کی وجہ سے ۔ وجہی نے اس کتاب میں تمثیلی انداز میں حسن و عشق کی داستان کو بیا ن کیا ہے ۔ بہت سے لوگ وجہی کو اردو انشائیہ نگاری کا باوا آدم قرار دیتے ہیں ۔ وجہی نے اس فرضی داستان میں جگہ جگہ صوفیانہ خیالات ، مذہبی روایات اور اخلاقی تعلیمات کی تیغوگ کی ہے ۔ وجہی کی یہ کتاب کلاسیکی نثر کا بہترین نمونہ ہے۔ اس نسخہ کو شمیم انہونوی نے مرتب کیا ہے۔ مقدمہ میں کتاب کی زبان و بیان وغیرہ پر تفصیل سے بات کی ہے۔ نیز آسان اور رائج زبان میں قصہ کا خلاصہ بھی پیش کردیا ہے۔

.....مزید پڑھئے

مصنف: تعارف

ملا وجہی

ملا وجہی

ملا وجہی کا پورا نام اسد اللہ تھا ۔سن ولادت دستیاب نہیں ہے لیکن وہ ابراہیم قطب شاہ کے دور حکومت میں پیدا ہوئے ۔ وجہی محمد قطب شاہ کے دربار کے ملک الشعرا تھے ۔ اردو اور فارسی میں شاعری کرتے تھے اور ایک با کمال نثار بھی تھے ۔فارسی میں وجہی نے اپنا تخلص وجیہی اور وجیہہ استعمال کیا ہے ۔ ان کے فارسی دیوان کا مخطوطہ کتب خانہ سر سالار جنگ میں محفوظ ہے ۔ ان کی مشہور زمانہ کتابیں قطب مشتری (1609)اور سب رس (1635)کو آج بھی اہمیت حاصل ہے ۔ قدیم بیاضوں میں ان کی غزلیں بھی مل جاتی ہیں جو قطب مشتری یا سب رس میں شامل نہیں ہیں۔محققین کا خیال ہے کہ تاج الحقائق بھی وجہی کی کتاب ہے ۔ سب رس کو اس لیے بھی اہمیت حاصل ہے کہ یہ اردو میں ادبی نثر کا پہلا نمونہ ہے ۔ان کا انتقال 1659میں گولکنڈ ہ میں ہوا۔

.....مزید پڑھئے

مصنف کی مزید کتابیں

مزید

مقبول و معروف

مزید

کتابوں کی تلاش بہ اعتبار

کتابیں : بہ اعتبار موضوع

شاعری کی کتابیں

رسالے

کتاب فہرست

مصنفین کی فہرست

یونیورسٹی اردو نصاب