shikasta kangore

Hayatullah Ansari

Azad Kitab Ghar, Delhi
1955 | More Info

About The Book

Description

حیات اللہ انصاری اردوكے افسانہ نگار و صحافی ہیں۔زیر نظر كتاب"شكستہ كنگورے"ان كے افسانوں كامجموعہ ہے۔حیات اللہ انصاری كرشن چندر اور بیدی كے ہم عصر تھے۔ترقی پسند تحریك كے زیر اثر افسانہ نگاری كا آغاز كیا۔انسان كی قدروقیمت اور حقیقت نگاری ان كےافسانوں كی دو اہم خوبیاں ہیں۔ زیر نظرمجموعہ كے تمام افسانوں میں بھی یہ خوبیاں بدرجہ اتم موجود ہیں۔مجموعہ كانام "شكستہ كنگورے"اس میں شامل ایك افسانے پر مشتمل ہے ۔یہ حیات اللہ انصاری كا ایك اہم افسانہ ہے جس كا مركزی كردار "منیر"زوال پذیرجاگیردارانہ طبقہ سے تعلق ركھتا ہے۔افسانے كی ساری كہانی اسی كے گردگھومتی ہے۔منیر اپنے جاگیردارنہ نظام ،اس كی شان و شوكت كو پھر سے واپس لانے كی تگ ودود كرتا ہے۔ لیكن اپنے گاوں كے كسانوں كی پریشانیوں كو دیكھ كر انھیں دور كرنے میں لگ جاتا ہے۔اس كردار کاجاگیردارانہ طبقے سے ہوتے ہوئے خوداس نظام کے خاتمہ كی كوشش كرنا ایک مثبت رویہ ہے۔اس طرح افسانہ نگار نے انسان كی قدرو قیمت كی اہمیت كو واضح كیا ہے۔ اس مجموعہ كے دیگرافسانے بھی اسی طرح كے موضوعات كا احاطہ كرتے ہیں۔ہر افسانے كا پلاٹ مربوط اور مكمل ہے۔ہرافسانہ میں كرداروں اور واقعات کاربط قاری كو اول تا آخر باندھے ركھتا ہے۔ اس كے علاوہ منظر نگاری مكمل جزئیات كے ساتھ عمدہ ہے۔افسانوں كی زبان سیدھی سادی ہے جس میں نئی تشبیہات و محاوروں نے مزید حسن پیدا كردیا ہے۔یہ افسانوی مجموعہ متنوع موضوعات،جذبات نگاری اور حقیقت نگاری كے ساتھ قارئین كی توجہ پانے میں كامیاب ہے۔

.....Read more

More From Author

See More

Popular And Trending Read

See More

EXPLORE BOOKS BY

Book Categories

Books on Poetry

Magazines

Index of Books

Index of Authors

University Urdu Syllabus