aasar-e-mahshar

अननोन ऑथर

मुंशी नवल किशोर, लखनऊ
1887 | अन्य

पुस्तक: परिचय

परिचय

"مثنوی آثار محشر" 1251 ھ میں لکھی گئی ۔ یہ فارسی رسالہ کا ترجمہ ہے جس کو رفیع الدین نے فارسی نثر میں تحریر کیا تھا ۔ جیسا کہ اس کے نام سے یہ بات واضح ہو جاتی ہے کہ اس کاموضوع محشر کے احوال کا بیان کرنا ہے ۔ مثنوی میں حمد و نعت کے بعد قیام محشر کے آثار کے بارے میں بیان کیا گیا ہے۔ مثلا ظہور مہدی ، عیسی کی آمد ، یاجوج ماجوج کا خروج وغیرہ اس کے بعد قیام قیامت اور پھر محشر کا اجتماع ، جنت و جہنم اور ان کے خصایص کو بیان کیا گیا ہے ۔یہ مثنوی مذہبی پہلو لئے ہوئے ہے مگر صنف مثنوی کے مطالعہ کے شایقین کے لئے ایک مزید اور خوبصورت اضافہ ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम