इंशाइया के ख़द्द-ओ-ख़ाल

वज़ीर आग़ा

डायरेक्टर क़ौमी कौंसिल बरा-ए-फ़रोग़-ए-उर्दू ज़बान, नई दिल्ली
2012 | अन्य
  • सहयोगी

    वज़ीर आग़ा

  • श्रेणियाँ

    शोध एवं समीक्षा

  • पृष्ठ

    118

पुस्तक: परिचय

परिचय

اردو میں انشائیہ نگاری کی شروعات تو نثر کے ساتھ ہی شروع ہوگئی تھی لیکن فنی طور پر اس کی نشو ونما مغربی اصناف کے زیر اثر ہوئی ۔اردو میں انشائیہ نے اپنی شناخت بنائی اور کئی عمدہ انشائیہ نگار پیدا ہوئے ۔ فنی طور پر اس کے خد و خال کو متعین کرنے میں یہ کتاب بہت ہی معاون ہے ۔انشائیہ کے بارے میں جیسا کے اب تک کی روایت ہے کہ مغرب سے آغاز ہے اور وہیں پروان چڑھا۔ اردو میں جب اس کا باضابطہ آغاز ہوا تو اس کے اصول و خدو خال متعین کیے جانے لگے کہ یہ کس طر ح کی رسمی تحریر ہوتی ہے کہ جس میں بے رسمی کا دخل سب سے زیادہ ہوتا ہے ۔ طنز و انشاء دونوں لازم ملزوم ہیں یا دونوں میں کس قدر فرق ہوتا ہے ۔ کیا انشائیہ اصلاحی تحریر ہوتی ہے یا پھر مزا حیہ ہوتی ہے اور اصلاح کا پہلو مخفی ہوتا ہے ۔ ان تمام جزئیات کو وزیر آغا نے اپنی اس کتاب میں پیش کیا ہے ۔ یہ کتاب جہاں ناقدین کے لیے بنیادی مآخد کی حیثیت رکھتی ہے وہیں ریسرچ اسکالروں کے لیے بہت سارے اشارات ملتے ہیں ۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

पूरा देखिए

पुस्तकों की तलाश निम्नलिखित के अनुसार

पुस्तकें विषयानुसार

शायरी की पुस्तकें

पत्रिकाएँ

पुस्तक सूची

लेखकों की सूची

विश्वविद्यालय उर्दू पाठ्यक्रम