पुस्तक: परिचय

ہندوستانی تمدن کبھی بھی جامد اور یکطرفہ نہیں رہا۔ تاریخ کے ہر دور میں ملی جلی اقدار اس کی خصوصیات رہی ہیں۔ ان خصوصیات کو بیش قیمت بنانے میں عہد وسطیٰ کے عظیم شاعر و صوفی امیر خسرو کا بڑا حصہ ہے ۔ بقول جواہر لال نہرو" ہندوستان میں خسرو جیسا کوئی شاعر نہیں ہوا کہ چھ سو سال گزرنے کے بعد بھی جس کے گیتوں میں جنتا کے لئے اتنی کشش ہو"۔ ان کی زندگی پر مشتمل یہ کتاب ان کے سات سو سالہ تقریبات کے موقع پر نیشنل کونسل آف ایجوکیشنل ریسرچ اینڈ ٹریننگ نے جاری کی ہے ۔ اس میں ان کے بچپن و جوانی کے حالات ، شاہی دربا میں آپ کا انداز، سماجی زندگی ، ہندوستان سے محبت، ہندی شاعری سے لے کر ان کے دین ومذہب تک پر گفتگو ہوئی ہے۔ موقع بموقع ان کی اور دیگر متعلقہ اشخاص کی تصویریں ہیں جن سے ماضی میں جھانکنے کا موقع ملتا ہے۔ ٹائیٹل انتہائی دلکش ہے جس میں قلعے میں بچھی ہوئی قالین پر امیر خسرو کو محو مطالعہ دکھایا گیا ہے اور سامنے سنہرے باغوں کا حسین منظر ہے۔

.....और पढ़िए

लेखक की अन्य पुस्तकें

लेखक की अन्य पुस्तकें यहाँ पढ़ें।

पूरा देखिए

पाठकों की पसंद

यदि आप अन्य पाठकों की पसंद में रुचि रखते हैं, तो रेख़्ता पाठकों की पसंदीदा उर्दू पुस्तकों की इस सूची को देखें।

पूरा देखिए

लोकप्रिय और ट्रेंडिंग

सबसे लोकप्रिय और ट्रेंडिंग उर्दू पुस्तकों का पता लगाएँ।

पूरा देखिए
बोलिए