Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

غصے میں جو نکھرا ہے اس حسن کا کیا کہنا

ساحر لدھیانوی

غصے میں جو نکھرا ہے اس حسن کا کیا کہنا

ساحر لدھیانوی

MORE BYساحر لدھیانوی

    غصے میں جو نکھرا ہے اس حسن کا کیا کہنا

    کچھ دیر ابھی ہم سے تم یوں ہی خفا رہنا

    اس حسن کے شعلے کی تصویر بنا لیں ہم

    ان گرم نگاہوں کو سینے سے لگا لیں ہم

    پل بھر اسی عالم میں اے جان ادا رہنا

    کچھ دیر ابھی ہم سے تم یوں ہی خفا رہنا

    یہ دہکا ہوا چہرہ یہ بکھری ہوئی زلفیں

    یہ بڑھتی ہوئی دھڑکن یہ چڑھتی ہوئی سانسیں

    سامان قضا ہو تم سامان قضا رہنا

    کچھ دیر ابھی ہم سے تم یوں ہی خفا رہنا

    پہلے بھی حسیں تھیں تم لیکن یہ حقیقت ہے

    وہ حسن مصیبت تھا یہ حسن قیامت ہے

    اوروں سے تو بڑھ کر ہو خود سے بھی سوا رہنا

    کچھ دیر ابھی ہم سے تم یوں ہی خفا رہنا

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Sahir Ludhianvi (Pg. 291)
    • Author : SAHIR LUDHIANVI
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے