Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

جسے تو قبول کر لے وہ ادا کہاں سے لاؤں

ساحر لدھیانوی

جسے تو قبول کر لے وہ ادا کہاں سے لاؤں

ساحر لدھیانوی

MORE BYساحر لدھیانوی

    جسے تو قبول کر لے وہ ادا کہاں سے لاؤں

    ترے دل کو جو لبھائے وہ صدا کہاں سے لاؤں

    میں وہ پھول ہوں کہ جس کو گیا ہر کوئی مسل کے

    مری عمر بہہ گئی ہے مرے آنسوؤں میں ڈھل کے

    جو بہار بن کے برسے وہ گھٹا کہاں سے لاؤں

    تجھے اور کی تمنا مجھے تیری آرزو ہے

    ترے دل میں غم ہی غم ہے مرے دل میں تو ہی تو ہے

    جو دلوں کو چین دے دے وہ دوا کہاں سے لاؤں

    مری بے بسی ہے ظاہر مری آہ بے اثر سے

    کبھی موت بھی جو مانگی تو نہ پائی اس کے در سے

    جو مراد لے کے آئے وہ دعا کہاں سے لاؤں

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Sahir Ludhianvi (Pg. 409)
    • Author : SAHIR LUDHIANVI
    • مطبع : Farid Book Depot (Pvt.) Ltd

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے