ابر پارہ ہوں کوئی دم میں چلا جاؤں گا

گیان چند جین

ابر پارہ ہوں کوئی دم میں چلا جاؤں گا

گیان چند جین

MORE BYگیان چند جین

    ابر پارہ ہوں کوئی دم میں چلا جاؤں گا

    نقش بر آب ہوں لہروں میں سما جاؤں گا

    دھار پر اپنے تعقل کو چڑھا جاؤں گا

    رسم آزادیٔ افکار اٹھا جاؤں گا

    یہ عقائد ہیں چھلاوے انہیں افشا کر دے

    معنیٔ سیمیا دنیا کو بتا جاؤں گا

    سر میں سودوں کے بنا کرتا ہوں تانے بانے

    اہل تدبیر کو چکر میں پھنسا جاؤں گا

    کیسے ترسیل کروں سامعۂ یاراں تک

    شہر آشوب پرندوں کا سنا جاؤں گا

    منہ کو بے روح کتابوں سے بصیرت نہ ملی

    شہر سے جاتے ہوئے سب کو جلا جاؤں گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے