دانے کے بعد کچھ نہیں دام کے بعد کچھ نہیں

شاہین عباس

دانے کے بعد کچھ نہیں دام کے بعد کچھ نہیں

شاہین عباس

MORE BY شاہین عباس

    دانے کے بعد کچھ نہیں دام کے بعد کچھ نہیں

    صبح کے بعد شام ہے شام کے بعد کچھ نہیں

    خواب کا آخری خمار آنکھ میں ہے کچھ انتظار

    نیند ذرا سا کام ہے کام کے بعد کچھ نہیں

    خاک خراب ہوں زمیں تو مرا ماجرا نہ سن

    نقش کے بعد نام تھا نام کے بعد کچھ نہیں

    شہر کی حد بھی ماپ لی شام بھی دل پہ چھاپ لی

    ایک چراغ اور ایک بام کے بعد کچھ نہیں

    وصل گیا تو ہجر تھا ہجر گیا تو کچھ نہ تھا

    خاص کے بعد عام ہوں عام کے بعد کچھ نہیں

    جسم کا نشہ پی چکے اپنی طرف سے جی چکے

    چلیے کہ جام الٹ چکا جام کے بعد کچھ نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY