aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

بنک کی جلوہ‌ گری پر غش ہوں

انشا اللہ خاں انشا

بنک کی جلوہ‌ گری پر غش ہوں

انشا اللہ خاں انشا

MORE BYانشا اللہ خاں انشا

    بنک کی جلوہ‌ گری پر غش ہوں

    یعنی اس سبز پری پر غش ہوں

    گرچہ دنیا کے ہنر ہیں لیکن

    اپنے میں بے ہنری پر غش ہوں

    برق کی طرح نہ تڑپوں کیوں کر

    تیری پوشاک زری پر غش ہوں

    اس کی پشواز کی سے لائی باس

    اس کی میں گود بھری پر غش ہوں

    غش نسیم سحری ہے مجھ پر

    میں نسیم سحری پر غش ہوں

    اسے کچھ ہو نہ سکا انشاؔ میں

    آہ کی بے اثری پر غش ہوں

    مأخذ:

    Kulliyat-e-inshaallah khan insha (Pg. 101)

    • مصنف: انشا اللہ خاں انشا
      • ناشر: منشی نول کشور، لکھنؤ
      • سن اشاعت: 1876

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے