ہے اسی میں پیار کی آبرو وہ جفا کریں میں وفا کروں

راجہ مہدی علی خاں

ہے اسی میں پیار کی آبرو وہ جفا کریں میں وفا کروں

راجہ مہدی علی خاں

MORE BYراجہ مہدی علی خاں

    ہے اسی میں پیار کی آبرو وہ جفا کریں میں وفا کروں

    جو وفا بھی کام نہ آ سکے تو وہی کہیں کہ میں کیا کروں

    مجھے غم بھی ان کا عزیز ہے کہ انہیں کی دی ہوئی چیز ہے

    یہی غم ہے اب مری زندگی اسے کیسے دل سے جدا کروں

    جو نہ بن سکے میں وہ بات ہوں جو نہ ختم ہو میں وہ رات ہوں

    یہ لکھا ہے میرے نصیب میں یوں ہی شمع بن کے جلا کروں

    نہ کسی کے دل کی ہوں آرزو نہ کسی نظر کی ہوں جستجو

    میں وہ پھول ہوں جو اداس ہوں نہ بہار آئے تو کیا کروں

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے