حیرت جلوہ مقدر ہے تو جلوا کیا ہے

محمود ایاز

حیرت جلوہ مقدر ہے تو جلوا کیا ہے

محمود ایاز

MORE BY محمود ایاز

    حیرت جلوہ مقدر ہے تو جلوا کیا ہے

    تجھ سے وابستہ ہے دل ورنہ تماشا کیا ہے

    کوئی دن اور غم ہجر میں شاداں ہو لیں

    ابھی کچھ دن میں سمجھ جائیں گے دنیا کیا ہے

    دل تو اک اور ہی آہنگ پہ ہے رقص کناں

    دل کا اس عمر فرومایہ سے رشتہ کیا ہے

    ہم اسے بھول چکے ہیں مگر اے دور حیات

    سامنے آنکھوں کے یہ صورت زیبا کیا ہے

    جینے والوں سے کہو کوئی تمنا ڈھونڈیں

    ہم تو آسودۂ منزل ہیں ہمارا کیا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : naqsh-e-bar aab (Pg. 105)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY