ہم تو بچھڑ کے رو لیتے ہیں

عتیق الہ آبادی

ہم تو بچھڑ کے رو لیتے ہیں

عتیق الہ آبادی

MORE BYعتیق الہ آبادی

    ہم تو بچھڑ کے رو لیتے ہیں

    داغ جدائی دھو لیتے ہیں

    غم کو ناحق رسوا کرنے

    مے خانے کو ہو لیتے ہیں

    ہو جاتے ہیں خود وہ مقدس

    نام بھی ان کا جو لیتے ہیں

    جس نے بھی کیں پیار سے باتیں

    ساتھ اس کے ہو لیتے ہیں

    کیوں چاہیں اخلاق کی فصلیں

    وہ جو نفرت بو لیتے ہیں

    دیو پری کے قصے سن کر

    بھوکے بچے سو لیتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY