ہوا کرے جو اندھیرا بہت گھنیرا ہے

گیان چند جین

ہوا کرے جو اندھیرا بہت گھنیرا ہے

گیان چند جین

MORE BYگیان چند جین

    ہوا کرے جو اندھیرا بہت گھنیرا ہے

    کسی کی زلف تلے ہر سمے سویرا ہے

    حکایت لب و رخسار میں گزار دیں وقت

    جہاں میں صرف گھڑی دو گھڑی بسیرا ہے

    جلاؤ گھر کی منڈیروں پہ چشم و دل کے دیے

    بہاؤ گیت برہ کے بہت اندھیرا ہے

    وہ محتسب ہو کہ شحنہ کہ مفتی و قاضی

    ہمارا کوئی نہیں ہے ہر ایک تیرا ہے

    مرے دماغ کے خناس نے پسند کیا

    کھنڈر کے ہفت بلاؤں کا جس میں ڈیرا ہے

    میں برگ زرد ہوں شایان التفات نہیں

    حسین گل کو حسیں تتلیوں نے گھیرا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے