اس عالم ویراں میں کیا انجمن آرائی

صوفی تبسم

اس عالم ویراں میں کیا انجمن آرائی

صوفی تبسم

MORE BYصوفی تبسم

    اس عالم ویراں میں کیا انجمن آرائی

    دو روز کی محفل ہے اک عمر کی تنہائی

    پھیلی ہیں فضاؤں میں اس طرح تری یادیں

    جس سمت نظر اٹھی آواز تری آئی

    اک ناز بھرے دل میں یہ عشق کا ہنگامہ

    اک گوشۂ خلوت میں یہ دشت کی پہنائی

    اوروں کی محبت کے دہرائے ہیں افسانے

    بات اپنی محبت کی ہونٹوں پہ نہیں آئی

    افسون تمنا سے بے دار ہوئی آخر

    کچھ حسن میں بے تابی کچھ عشق میں زیبائی

    وہ مست نگاہیں ہیں یا وجد میں رقصاں ہے

    تسنیم کی لہروں میں فردوس کی رعنائی

    ان مدھ بھری آنکھوں میں کیا سحر تبسمؔ تھا

    نظروں میں محبت کی دنیا ہی سمٹ آئی

    مآخذ:

    • کتاب : sau-e-baar-e-chaman mahka (Pg. 114)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY