کہیں امید سی ہے دل کے نہاں خانے میں

احمد مشتاق

کہیں امید سی ہے دل کے نہاں خانے میں

احمد مشتاق

MORE BYاحمد مشتاق

    کہیں امید سی ہے دل کے نہاں خانے میں

    ابھی کچھ وقت لگے گا اسے سمجھانے میں

    موسم گل ہو کہ پت جھڑ ہو بلا سے اپنی

    ہم کہ شامل ہیں نہ کھلنے میں نہ مرجھانے میں

    ہم سے مخفی نہیں کچھ رہ گزر شوق کا حال

    ہم نے اک عمر گزاری ہے ہوا کھانے میں

    ہے یوں ہی گھومتے رہنے کا مزہ ہی کچھ اور

    ایسی لذت نہ پہنچنے میں نہ رہ جانے میں

    نئے دیوانوں کو دیکھیں تو خوشی ہوتی ہے

    ہم بھی ایسے ہی تھے جب آئے تھے ویرانے میں

    موسموں کا کوئی محرم ہو تو اس سے پوچھو

    کتنے پت جھڑ ابھی باقی ہیں بہار آنے میں

    مأخذ :
    • کتاب : Junoon (Pg. 29)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے