لب پہ پابندی تو ہے احساس پر پہرا تو ہے

ساحر لدھیانوی

لب پہ پابندی تو ہے احساس پر پہرا تو ہے

ساحر لدھیانوی

MORE BY ساحر لدھیانوی

    لب پہ پابندی تو ہے احساس پر پہرا تو ہے

    پھر بھی اہل دل کو احوال بشر کہنا تو ہے

    خون اعدا سے نہ ہو خون شہیداں ہی سے ہو

    کچھ نہ کچھ اس دور میں رنگ چمن نکھرا تو ہے

    اپنی غیرت بیچ ڈالیں اپنا مسلک چھوڑ دیں

    رہنماؤں میں بھی کچھ لوگوں کا یہ منشا تو ہے

    ہے جنہیں سب سے زیادہ دعویٔ حب الوطن

    آج ان کی وجہ سے حب وطن رسوا تو ہے

    بجھ رہے ہیں ایک اک کر کے عقیدوں کے دیے

    اس اندھیرے کا بھی لیکن سامنا کرنا تو ہے

    جھوٹ کیوں بولیں فروغ مصلحت کے نام پر

    زندگی پیاری سہی لیکن ہمیں مرنا تو ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    لب پہ پابندی تو ہے احساس پر پہرا تو ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY