نظر تج پہ ہے کیا تماشا کا حاجت

قلی قطب شاہ

نظر تج پہ ہے کیا تماشا کا حاجت

قلی قطب شاہ

MORE BYقلی قطب شاہ

    نظر تج پہ ہے کیا تماشا کا حاجت

    نہیں سبز خط آگے چمپا کا حاجت

    طبیباں کریں منج کوں بالی سوں دارو

    کہ بالی ہیں موہن ہے بالا کا حاجت

    ہمیں نیشکر نمنے ہلجے ہیں بند میں

    نہیں ہور ہمنا کوں جالا کا حاجت

    خماری نین تھے کھلے پھول جیو میں

    نہیں مو کو دونا و بالا کا حاجت

    مرا دل ہے زر بفت کا کارخانہ

    نہیں منج کوں بازار والا کا حاجت

    تو کہنیاں کتاباں کے جیو میں لکھیا ہوں

    معما ہے نیں کھول کہنا کا حاجت

    انگوٹھی سلیماں کی تج ہات میں ہے

    سکندر کے درپن اجالا کا حاجت

    مرا دل کندن حسن کا کھان ہے تو

    نہیں ہے سناری تقاضا کا حاجت

    ہمن مدعا مدعی نا بجھے کچ

    نکو بحث کرنیں ہے اعدا کا حاجت

    معانیؔ ترا زرگری کوئی نہ بوجھیں

    کہ اس علم میں نیں ہے دانا کا حاجت

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے