تقدیر جب معاون تدبیر ہو گئی

جگت موہن لال رواں

تقدیر جب معاون تدبیر ہو گئی

جگت موہن لال رواں

MORE BY جگت موہن لال رواں

    تقدیر جب معاون تدبیر ہو گئی

    مٹی پہ کی نگاہ تو اکسیر ہو گئی

    دل جاں نثار مے ہے زباں تائب شراب

    اس کشمکش میں روح کی تعزیر ہو گئی

    چھینٹیں جو خوں کی دامن قاتل میں رہ گئیں

    محشر میں میرے قلب کی تفسیر ہو گئی

    یا قتل کیجئے مجھے یا بخش دیجیے

    اب ہو گئی حضور جو تقصیر ہو گئی

    شبنم اوڑھی گلوں سے مرا نقشہ کھنچ گیا

    مرجھا گئی کلی مری تصویر ہو گئی

    زندانیاں کاکل ہستی کدھر کو جائیں

    اک زلف سب کے پاؤں کی زنجیر ہو گئی

    میں کہہ چلا تھا داور محشر سے حال دل

    اک سرمگیں نگاہ گلو گیر ہو گئی

    بس تھم گیا سفیر عمل کہہ کے یا نصیب

    جس جا پہ ختم منزل تدبیر ہو گئی

    توڑا ہے دم ابھی ابھی بیمار ہجر نے

    آئے مگر حضور کو تاخیر ہو گئی

    جب اپنے آپ پر ہمیں قابو ملا رواںؔ

    آسان راز دہر کی تفسیر ہو گئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY