ساقی کی گاڑی کا پہیا

فیض احمد فیض

ساقی کی گاڑی کا پہیا

فیض احمد فیض

MORE BYفیض احمد فیض

    زہرہ نگاہ کے ہاں دعوت ختم ہوئی تو زہرہ نگاہ نے ساقی فاروقی سے درخواست کی کہ احمد فراز صاحب کو ان کی رہائش گاہ تک پہنچادیں ۔ ساقی نے جواب دیا:

    ’’میں انہیں اپنی گاڑی میں نہیں بٹھا سکتا ۔ کیونکہ جوں ہی کوئی خراب شاعر میری گاڑی میں بیٹھتا ہے، گاڑی کا ایک پہیہ ہلنے لگتا ہے ۔‘‘

    اس پر فیض احمد فیض نے فقرہ کسا:

    ’’ساقی تمہارے بیٹھنے سے تو تمہاری گاڑی کے دونوں پہیئے مستقل ہلتے رہتے ہوں گے۔‘‘

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY