میں ڈرتا ہوں

افضال احمد سید

میں ڈرتا ہوں

افضال احمد سید

MORE BY افضال احمد سید

    میں ڈرتا ہوں

    اپنے پاس کی چیزوں کو

    چھو کر شاعری بنا دینے سے

    روٹی کو میں نے چھوا

    اور بھوک شاعری بن گئی

    انگلی چاقو سے کٹ گئی

    اور خون شاعری بن گیا

    گلاس ہاتھ سے گر کر ٹوٹ گیا

    اور بہت سی نظمیں بن گئیں

    میں ڈرتا ہوں

    اپنے سے تھوڑی دور کی چیزوں کو

    دیکھ کر شاعری بنا دینے سے

    درخت کو میں نے دیکھا

    اور چھاؤں شاعری بن گئی

    چھت سے میں نے جھانکا

    اور سیڑھیاں شاعری بن گئیں

    عبادت خانے پر میں نے نگاہ ڈالی

    اور خدا شاعری بن گیا

    میں ڈرتا ہوں

    اپنے سے دور کی چیزوں کو

    سوچ کر شاعری بنا دینے سے

    میں ڈرتا ہوں

    تمہیں سوچ کر

    دیکھ کر

    چھو کر

    شاعری بنا دینے سے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites