محصور تھا

شہرام سرمدی

محصور تھا

شہرام سرمدی

MORE BYشہرام سرمدی

    بہت گڈمڈ تھے

    روز و شب کے وہ سب تانے بانے اور

    نہ میں مشاق تھا ایسا

    کہ چادر کوئی بن لیتا

    مگر محصور تھا

    اور جانتا تھا یہ مشقت

    کاٹنا قسمت میں آیا ہے

    سو جیسے بن پڑا یہ کام بھی پورا کیا میں نے

    پہ اب جب دیکھتا ہوں

    اپنے روز و شب کا حاصل

    یعنی وہ چادر

    تو کہتا ہوں

    کہ اے لوگو!

    اسے ہم راہ میرے دفن کر دینا

    کوئی پوچھے تو کہہ دینا

    ارے چھوڑو چلو اک چائے پیتے ہیں

    مآخذ :
    • کتاب : Na Mau'ud (Pg. 82)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY