میرا وطن

عرش ملسیانی

میرا وطن

عرش ملسیانی

MORE BYعرش ملسیانی

    ایمن کا نور اگر ہے تو میرے وطن میں ہے

    اب تک بھی شان طور اسی اجڑے چمن میں ہے

    دونوں ہیں تیری یاد میں آلودۂ غرض

    جو عیب شیخ میں ہے وہی برہمن میں ہے

    لپٹا ہوا ہے دور خزاں بھی بہار سے

    دونوں کا رنگ لالۂ خونیں کفن میں ہے

    کیوں دل میں ڈھونڈتے ہو شگفتہ مزاجیاں

    پہلی سی اب بہار کہاں اس چمن میں ہے

    ذرے چمک رہے ہیں تری رہ گزار کے

    ہے تیرا نقش پا کہ چراغ انجمن میں ہے

    ناکام حسرتوں کی یہی تو ہے یادگار

    داغوں کا جو ہجوم دل پر محن میں ہے

    یہ بھی خبر ہے گوہر مقصد نہیں یہاں

    دل تیرا پھر بھی غرق فرات و جمن میں ہے

    عزم سفر بہار میں اے عرشؔ کس لیے

    دنیا کی ہر بہار بہار وطن میں ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Arsh (Pg. 416)
    • Author : Arsh Malsiyani
    • مطبع : Ali Hujwiri Publisher H. 811, A Androon, Akbari Gate, Lahore

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY