سلیم خاں کہ وہ ہے نور چشم واصل خاں

مرزا غالب

سلیم خاں کہ وہ ہے نور چشم واصل خاں

مرزا غالب

MORE BYمرزا غالب

    INTERESTING FACT

    ۱۸۶۲ء

    سلیم خاں کہ وہ ہے نور چشم واصل خاں

    حکیم حاذق و دانا ہے وہ لطیف کلام

    تمام دہر میں اس کے مطب کا چرچا ہے

    کسی کو یاد بھی لقمان کا نہیں ہے نام

    اسے فضائل علم و ہنر کی افزایش

    ہوئی ہے مبدع عالم سے اس قدر انعام

    کہ بحث علم میں اطفال ابجدی اس کے

    ہزار بار فلاطوں و دے چکے الزام

    عجیب نسخہ نادر لکھا ہے ایک اس نے

    کہ جس میں حکمت و طب ہی کے مسئلے ہیں تمام

    نہیں کتاب ہے اک منبع نکات بدیع

    نہیں کتاب ہے اک معدن جواہر کام

    کل اس کتاب کے سال تمام میں جو مجھے

    کمال فکر میں دیکھا خرد نے بے آرام

    کہا یہ جلد کہ تو اس میں سوچتا کیا ہے

    لکھا ہے نسخہ تحفہ یہی ہے سال تمام

    مأخذ :
    • کتاب : Deewan-e-Ghalib (Pg. 476)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY