بہ نقص ظاہری رنگ کمال طبع پنہاں ہے

مرزا غالب

بہ نقص ظاہری رنگ کمال طبع پنہاں ہے

مرزا غالب

MORE BY مرزا غالب

    INTERESTING FACT

    ۱۸۱۶ء

    بہ نقص ظاہری رنگ کمال طبع پنہاں ہے

    کہ بہر مدعاے دل زبان لال زنداں ہے

    خموشی خانہ زاد چشم بے پروا نگاہاں ہے

    غبار سرمہ یاں گرد سواد نرگستاں ہے

    صفاے اشک میں داغ جگر جلوہ دکھاتے ہیں

    پر طاؤس گویا برق ابر چشم گریاں ہے

    بہ بوے زلف مشکیں یہ دماغ آشفتۂ رم ہیں

    کہ شاخ آہواں دود چراغ آسا پریشاں ہے

    تکلف برطرف ہے جانستاں تر لطف بدخویاں

    نگاہ بے حجاب ناز تیغ تیز عریاں ہے

    اسدؔ یہ فرط غم نے کی تلف کیفیت شادی

    کہ صبح عید مجھ کو بدتر از چاک گریباں ہے

    مآخذ:

    • Book : Deewan-e-Ghalib (Pg. 275)
    • Book : Ghair Mutdavil Kalam-e-Ghalib (Pg. 139)
    • Author : Jamal Abdul Wahid
    • مطبع : Ghair Mutdavil Kalam-e-Ghalib Jamal Abdul Wahid Ghalib Academy Basti Hazrat Nizamuddin,New Delhi-13 (2016)
    • اشاعت : 2016

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY