Kishwar Naheed's Photo'

کشور ناہید

1940 | اسلام آباد, پاکستان

پاکستانی شاعرہ ، اپنے تانیثی خیالات اور مذہبی کٹرپن کی مخالفت کے لئے مشہور

پاکستانی شاعرہ ، اپنے تانیثی خیالات اور مذہبی کٹرپن کی مخالفت کے لئے مشہور

غزل

ایک ہی آواز پر واپس پلٹ آئیں_گے لوگ

کشور ناہید

بگڑی بات بنانا مشکل بڑی بات بنائے کون

کشور ناہید

تجھ سے وعدہ عزیز_تر رکھا

کشور ناہید

ترے قریب پہنچنے کے ڈھنگ آتے تھے

کشور ناہید

خوشبو کو رنگتوں پہ ابھرتا ہوا بھی دیکھ

عذرا نقوی

ذہن رہتا ہے بدن خواب کے دم تک اس کا

کشور ناہید

عمر میں اس سے بڑی تھی لیکن پہلے ٹوٹ کے بکھری میں

کشور ناہید

مجھے بھلا کے مجھے یاد بھی رکھا تو نے

کشور ناہید

ہوا کچھ اپنے سوال تحریر دیکھتی ہے

کشور ناہید

اے رہ_ہجر_نو_فروز دیکھ کہ ہم ٹھہر گئے

کشور ناہید

تلاش دریا کی تھی بظاہر سراب دیکھا

کشور ناہید

دل کو بھی غم کا سلیقہ نہ تھا پہلے پہلے

کشور ناہید

سلگتی ریت پہ آنکھیں بھی زیر_پا رکھنا

کشور ناہید

مری آنکھوں میں دریا جھولتا ہے

کشور ناہید

وداع کرتا ہے دل سطوت_رگ_جاں کو

کشور ناہید

کچھ دن تو ملال اس کا حق تھا

کشور ناہید

یہ حوصلہ تجھے مہتاب_جاں ہوا کیسے

کشور ناہید

نظم

خداؤں سے کہہ دو

کشور ناہید

سونے سے پہلے ایک خیال

عذرا نقوی

سونے سے پہلے ایک خیال

کشور ناہید

شکست_رنگ

عذرا نقوی

گلاس لینڈسکیپ

کشور ناہید

گھاس تو مجھ جیسی ہے

کشور ناہید

گھاس تو مجھ جیسی ہے

عذرا نقوی

ہم گنہ_گار عورتیں

کشور ناہید

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Added to your favorites

Removed from your favorites