noImage

مذاق بدایونی

1819 - 1894 | بدایوں, ہندوستان

غزل 6

اشعار 5

زباں پر آہ رہی لب سے لب کبھو نہ ملا

تری طلب تو ملی کیا ہوا جو تو نہ ملا

ہم سے وحشی نہیں ہونے کے گرفتار کبھی

لوگ دیوانے ہیں زنجیر لیے پھرتے ہیں

  • شیئر کیجیے

سات آسماں کی سیر ہے پردوں میں آنکھ کے

آنکھیں کھلیں تو طرفہ تماشا نظر پڑا

کتاب 1

آئینہ دلدار

 

1956

 

"بدایوں" کے مزید مصنفین

  • جوش بدایونی جوش بدایونی