Taashshuq Lakhnavi's Photo'

تعشق لکھنوی

1824 - 1892

تعشق لکھنوی

غزل 13

اشعار 28

میں باغ میں ہوں طالب دیدار کسی کا

گل پر ہے نظر دھیان میں رخسار کسی کا

  • شیئر کیجیے

ہم کس کو دکھاتے شب فرقت کی اداسی

سب خواب میں تھے رات کو بیدار ہمیں تھے

وہ کھڑے کہتے ہیں میری لاش پر

ہم تو سنتے تھے کہ نیند آتی نہیں

  • شیئر کیجیے

جس طرف بیٹھتے تھے وصل میں آپ

اسی پہلو میں درد رہتا ہے

کبھی تو شہیدوں کی قبروں پہ آؤ

یہ سب گھر تمہارے بسائے ہوئے ہیں

کتاب 12

متعلقہ مصنفین

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے