آ گیا دل جو کہیں اور ہی صورت ہوگی

لالہ مادھو رام جوہر

آ گیا دل جو کہیں اور ہی صورت ہوگی

لالہ مادھو رام جوہر

MORE BYلالہ مادھو رام جوہر

    آ گیا دل جو کہیں اور ہی صورت ہوگی

    لوگ دیکھیں گے تماشا جو محبت ہوگی

    دل لگی ترک محبت نہیں تقصیر معاف

    ہوتے ہوتے مرے قابو میں طبیعت ہوگی

    ان کے آنے کی خبر سن کے تو یہ حال ہوا

    جب وہ آئیں گے تو پھر کیا مری حالت ہوگی

    ٹکڑے کر ڈالے کوئی اس کے تو میں بھی خوش ہوں

    دل نہ ہوگا نہ مری جان محبت ہوگی

    وہ چھپایا کریں اس بات سے کیا ہوتا ہے

    آپ سر چڑھ کے پکارے گی جو الفت ہوگی

    یہ نہ فرماؤ شب ہجر کٹے گی کیوں کر

    تم کو کیا کام جو ہوگی مری حالت ہوگی

    مار ڈالا مجھے بے موت بڑا کام کیا

    خوب تعریف تری اے شب فرقت ہوگی

    اے دل زار مزہ دیکھ لیا الفت کا

    ہم نہ کہتے تھے کہ اس کام میں ذلت ہوگی

    یہ بھی کچھ بات ہے پھر وصل نہ ہو اے جوہرؔ

    رنج راحت سے ہوا رنج سے راحت ہوگی

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    آ گیا دل جو کہیں اور ہی صورت ہوگی فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY