آہ جو دل سے نکالی جائے گی

اکبر الہ آبادی

آہ جو دل سے نکالی جائے گی

اکبر الہ آبادی

MORE BYاکبر الہ آبادی

    آہ جو دل سے نکالی جائے گی

    کیا سمجھتے ہو کہ خالی جائے گی

    اس نزاکت پر یہ شمشیر جفا

    آپ سے کیوں کر سنبھالی جائے گی

    کیا غم دنیا کا ڈر مجھ رند کو

    اور اک بوتل چڑھا لی جائے گی

    شیخ کی دعوت میں مے کا کام کیا

    احتیاطاً کچھ منگا لی جائے گی

    یاد ابرو میں ہے اکبرؔ محو یوں

    کب تری یہ کج خیالی جائے گی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    مآخذ
    • کتاب : Roomani Ghazlen (Pg. 64)
    • Author : Samina Hijab
    • مطبع : Maktaba Jamia Limited, New Delhi (1997)
    • اشاعت : 1997

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY