آنکھوں میں ہے کیسا پانی بند ہے کیوں آواز

طاہر عدیم

آنکھوں میں ہے کیسا پانی بند ہے کیوں آواز

طاہر عدیم

MORE BYطاہر عدیم

    آنکھوں میں ہے کیسا پانی بند ہے کیوں آواز

    اپنے دل سے پوچھو جاناں میری چپ کا راز

    اس کے زخم کو سہنا رہنا اس میں ہی محصور

    اس کے ظلم پہ ہنس کر کہنا تیری عمر دراز

    تیری مرضی خوشیوں کے یا چھیڑ غموں کے راگ

    تو میری سر تال کا مالک میں ہوں تیرا ساز

    دل کی ہر دھڑکن کا موجب دید شنید تری

    سینے میں جلتی سانسوں کا تو ہی ایک جواز

    اور سی اور ہوا ہے ساجن زیست کا ہر مفہوم

    اور سی اور ہوئی ہے میری سوچوں کی پرواز

    تجھ بن کون بنے گا خالی آنکھیں گنگ صدا

    تجھ بن جان کرے گا طاہرؔ کس سے راز نیاز

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے