اب کہاں اور کسی چیز کی جا رکھی ہے

انور مسعود

اب کہاں اور کسی چیز کی جا رکھی ہے

انور مسعود

MORE BYانور مسعود

    اب کہاں اور کسی چیز کی جا رکھی ہے

    دل میں اک تیری تمنا جو بسا رکھی ہے

    سر بکف میں بھی ہوں شمشیر بکف ہے تو بھی

    تو نے کس دن پہ یہ تقریب اٹھا رکھی ہے

    دل سلگتا ہے ترے سرد رویے سے مرا

    دیکھ اس برف نے کیا آگ لگا رکھی ہے

    آئنہ دیکھ ذرا کیا میں غلط کہتا ہوں

    تو نے خود سے بھی کوئی بات چھپا رکھی ہے

    جیسے تو حکم کرے دل مرا ویسے دھڑکے

    یہ گھڑی تیرے اشاروں سے ملا رکھی ہے

    مطمئن مجھ سے نہیں ہے جو رعیت میری

    یہ مرا تاج رکھا ہے یہ قبا رکھی ہے

    گوہر اشک سے خالی نہیں آنکھیں انورؔ

    یہی پونجی تو زمانے سے بچا رکھی ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    انور مسعود

    انور مسعود

    مآخذ:

    • کتاب : ik daraicha ik chirag (Pg. 26)
    • Author : ANWAR MASOOD
    • مطبع : Dost Publications (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY